work

اسلامی ملک میں ساحل سمندر سے ٹکراتی لاشو ں نے قیامت کا سماں پیدا کر دیا انسانیت کی روح ہی کانپ اٹھی


جکارتہ(مانیٹرنگ ڈیسک)انڈونیشیا میں زلزلہ اور سونامی انمٹ نقوش چھوڑ گیا، سونامی کی زد میں آ کر جاں بحق ہونے والے افراد کی نعشیں ساحل سے ٹکرانے لگیں، نعشیں ناقابل شناخت ہیں ،بدن پھول چکے ہیں۔ بین الاقوامی میڈیا کے مطابق انڈونیشیا میں پیش آنے والے زلزلے کے بعد سونامی کی زد میں آتے ہوئے اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھنے والے افراد کی نعشیں اب ساحل ِ سمندر سے ٹکرانے لگی ہیں۔

امدادی ٹیم کے سربراہ احمد حمیم کا کہنا ہے کہ سونامی کے ساتھ سمندر میں گم ہونے والی نعشیں اب ساحلوں سے ٹکرانے لگی ہیں، ان کی اکثریت کے بدن پھول چکے ہیں جبکہ بعض کے چہرے ناقابلِ شناخت ہیں۔ان کا کہنا ہے کہ اب تک ان کی ٹیم نے ساحلوں سے 11 نعشیں جمع کی ہیں اور گزشتہ 7 دنوں میں 100 سے زائد نعشوں تک رسائی ہوئی ہے جبکہ ملبے تلے سے کوئی بھی شخص زندہ نہیں نکالا جا سکا۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
5
راشد خان افغانستان میں موجود گھر والوں کی حفاظت سے متعلق پریشان
19
پی ٹی آئی نے بلوچستان حکومت سے علیحدگی پر غور شروع کر دیا
18
وزیر اعظم ہاؤس بلا کر عمران خان مجھے کیا کہتے رہے؟ بشیر میمن کے تہلکہ خیز انکشافات
17
بجلی سستی کیے جانے کا امکان
16
نواز شریف کے 3 قریبی ساتھی کس اعلیٰ شخصیت سے ملے؟ بڑی خبر
15
عید کے بعد کیا کرنا ہے؟ حکمت عملی تیار

تازہ ترین ویڈیو
23
امت مسلمہ کے ہیرو صلاح الدین ایوبی کے قول کے پیچھے چھپی سچی کہانی
27 2
یہ وہ جھوٹ ہے جوہر لڑکی ضرور بولتی ہے
2
کرونا وبا کب اور کیسے ختم ہو گی ؟ 1400 سال پہلے حضور اکرم ﷺ کی نشاندہی ، جان کر آپ پھولے نہ سمائیں گے
4 7
جھگڑالو بیوی نعمت خدا وندی مگر کیسے
3 9
کیسے لڑکیوں کو خواب دکھا کر تباہ کیا جاتا ہے ایک سچا واقعہ
52394
الطاف حسین نے آخری وقت میں ہندو مذہب کیوں اختیار کیا،کرونا سے ڈر کر یا ہندووں کی محبت میں

دلچسپ و عجیب
11
دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
15 7
وہ سربراہ جسے دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
9 1
کرونا وائرس کی وبا کے دوران میاں بیوی ازدواجی تعلقات قائم رکھ سکتے ہیں ؟
20 8
دریا ’’نیل‘‘ کے نیچے زیر زمین کونسا دریا بہتا ہے
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us