ship

تقسیم ہند کے وقت پاکستان کے پاس دو ، بھارت کے پاس شپ یارڈ تھے اب کیا صورتحال ہے،سینیٹ میں ایسا انکشاف کہ پاکستانی پریشان ہی ہو جائیں گے


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداوار میں انکشاف ہوا ہے کہ قیام پاکستان کے وقت پاکستان کے پاس دو شپ یارڈ جبکہ انڈیا کے پاس پانچ تھےِ پاکستان میں ایک شپ یارڈ کراچی جبکہ دوسرا ایسٹ پاکستان میں تھا اب انڈیا کے پاس 45سے زائد

شپ یارڈ بنگلہ دیش کے پاس 25جبکہ پاکستان کے پاس ایک شپ یارڈ ہے،سابقہ حکومتوں نے دفاعی بجٹ میں کمی کر دی جبکہ انڈیا دفاعی پیداوار مین زیادہ سرمایہ کاری کر رہاہے ۔ پاکستان نے2016-17میں 30کروڑ کی ایکسپورٹ کی ۔،لمی منڈی میں پاکستان کا منفی امیج اور ترقی یافتہ ممالک کی اجارہ داری بھی برآمدات میں بڑی رکاوٹ ہے۔ تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاعی پیداور کا اجلاس چیئرمین کمیٹی لیفٹینٹ جنرل ( ر) عبدالقیوم کی سربراہی میں پارلیمنٹ ہائوس میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں سینیٹر محمد اکرم ، تاج آفریدی ، نزہت صادق، شاہین خالد بٹ ، سرفراز بگتی کے علاوہ سیکرٹری دفاعی پیداوار جنرل ( ر) نعیم چوہدری اور اعلی حکام نے شرکت کی ۔چیئرمین کمیٹی لیفٹینٹ جنرل ( ر) عبدالقیوم نے کہاکہ اس وقت زیادہ تر دفاعی پیداور سے متعلق ادارے حکومت سے کوئی گرانٹ نہیں لیتے جن میں پاکستان شپ یارڈ ، این آر ٹی وی ہری پور، کامرہ ، اور ہیوی میکینکل انڈسٹری ٹیکسلا شامل ہیں ۔ انہوں نے کہادیکھنا

یہ ہے یہ ادارے ملکی دفاعی ضروریات کے علاوہ کتنی بچت قوم کو دے رہے ہیں ۔ سیکرٹری دفاعی پیداوار جنرل ( ر) نعیم چوہدری نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے دفاعی پیداوار کے حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ پاکستان کی دفاعی پیداوار سے متعلق نمائش نہ صرف اندرون ملک بلکہ بیرون ملک آئیڈیاز نمائشوں میںبھی

شریک ہوتاہے۔ انہوں نے انکشاف کیاکہ قیام پاکستان کے وقت پاکستان کے پاس دو شپ یارڈ جبکہ انڈیا کے پاس پانچ تھے ۔ پاکستان میں ایک شپ یارڈ کراچی جبکہ دوسرا ایسٹ پاکستان مین تھا اب انڈیا کے پاس 45سے زائد شپ یارڈ بنگلہ دیش کے پاس 25جبکہ پاکستان کے پاس ایک شپ یارڈ ہے، انہوں نے کہاکہ کسی بھی ملک

کی ترقی میں شپ یارڈ بہت اہم کردار ادا کرتاہے ہم نے اس جانب توجہ نہیں دی ۔ اس وقت گوادر میں شپ یارڈ بنانے کا منصوبہ ہے جس کا نوٹیفیکشن ہو گیاہے۔ کراچی شپ یارڈ اس وقت 5500ملین منافع کما کر دے رہاہے۔ گوادر منصوبے سے لوگوں کو بڑے پیمانے پر ملازمتیں ملیں گی ابتدائی طور پر ٹارگٹ 27000تک ہیں ۔

جبکہ پروجیکٹ میں توسیع ہونے کے بعد مزید ہزاروں ملازمیں پیدا ہوں گی ۔ سیکرٹری دفاعی پیداوار نے انکشاف کیا کہ ماضی میں حکومتوں نے دفاعی پیداوار پر کٹ لگایا ہماری ڈٰمانڈ سے کہیں کم رقم دی جا رہی ہے۔ ہم مارکیٹینگ کی حکمت عملی بنا رہے ہیں تاکہ ہمیں حکومت سے رقوم مانگنے کی ضرورت نہ رہے

اس وقت 46000ہزار لوگ دفاعی پیداورار سے منسلک ہیں ۔ پاکستان کا دفاعی بجٹ اس وقت 56بلین اور انڈیا کا70بلین ڈالر ہے۔ اگر سہولیات فراہم کیجائیں توہمیں حکومت کے پاس جانے کی ضرورت نہ رہے سینیٹر سرفراز بگتی نے کہاکہ گوادر میں لگائے جانے والے شپ یارڈ میں غیر تربیت یافتہ ملازمتوں میں ترجیح

بلوچتان کے لوگوں کو دی جائے۔ جس سے لوگوں کے اندر بے چینی بھی دور ہوگی ۔ کمیٹی میں دفاعی پیداوار کے حکام نے انکشاف کیاکہ کہ حکومت پاکستان مشین ٹول فیکٹری دفاعی پیداوار کو دینا چاہتی ہے لیکن پاکستان مشین ٹول فیکٹری اس وقت 6ارب روپے کی مقروض ہے جو دفاعی پیداور میں اہم ہے اس سے بننے والے

پرزے ہوائی جہازوں اور دفاعی پیداوار کے دیگر منصووں میں استعمال ہو ہتے ہیں ۔ اب یہ حالت ہے کہ وہاں ملازمین تو تنخواہیں تک نہیں مل رہیں ۔ ٹول فیکٹری کا قرض اتر جانے کے بعد اس کو منافع بخش بنایا جاسکتاہے جس پر چیئرمین کمیٹی جنرل (ر) عبدالقیوم نے کہاکہ ماضی میں انہوں نے خسارے میں چلنے والی اسٹیل

ملز جو دس ارب روپے خسارے میں جا رہی تھی اسے نہ صرف خسارے سے نکالا بلکہ جس وقت چارج چھوڑا اس وقت اسٹیل ملز میں بارہ ارب کا اسٹیل اور خام مال کے علاوہ بنک اکاونٹ میں دس ارب روپے منافع پڑے تھے اسی طرح پی آئی اے کو ماضی میں ائیر مارشل ( ر) نور خان نے منافع بخش سروس بنایا لیکن

حکومتوں کی بے جا مداخلت اقربا پروری اور سیاست نے قومی اداروں کو تباہی کے دہانے لاکھڑا کیا ہے



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
5
راشد خان افغانستان میں موجود گھر والوں کی حفاظت سے متعلق پریشان
19
پی ٹی آئی نے بلوچستان حکومت سے علیحدگی پر غور شروع کر دیا
18
وزیر اعظم ہاؤس بلا کر عمران خان مجھے کیا کہتے رہے؟ بشیر میمن کے تہلکہ خیز انکشافات
17
بجلی سستی کیے جانے کا امکان
16
نواز شریف کے 3 قریبی ساتھی کس اعلیٰ شخصیت سے ملے؟ بڑی خبر
15
عید کے بعد کیا کرنا ہے؟ حکمت عملی تیار

تازہ ترین ویڈیو
23
امت مسلمہ کے ہیرو صلاح الدین ایوبی کے قول کے پیچھے چھپی سچی کہانی
27 2
یہ وہ جھوٹ ہے جوہر لڑکی ضرور بولتی ہے
2
کرونا وبا کب اور کیسے ختم ہو گی ؟ 1400 سال پہلے حضور اکرم ﷺ کی نشاندہی ، جان کر آپ پھولے نہ سمائیں گے
4 7
جھگڑالو بیوی نعمت خدا وندی مگر کیسے
3 9
کیسے لڑکیوں کو خواب دکھا کر تباہ کیا جاتا ہے ایک سچا واقعہ
52394
الطاف حسین نے آخری وقت میں ہندو مذہب کیوں اختیار کیا،کرونا سے ڈر کر یا ہندووں کی محبت میں

دلچسپ و عجیب
11
دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
15 7
وہ سربراہ جسے دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
9 1
کرونا وائرس کی وبا کے دوران میاں بیوی ازدواجی تعلقات قائم رکھ سکتے ہیں ؟
20 8
دریا ’’نیل‘‘ کے نیچے زیر زمین کونسا دریا بہتا ہے
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us