1 7

جہانگیر ترین کی آمدن میں کتنا بڑا اضافہ ہو ا


اسلام آباد( آن لائن ) عمران خان کی حکومت برسراقتدار آنے کے بعد جہانگیر ترین کی آمدن میں بے بہا اضافہ ہواہے، جہانگیر ترین کی سالانہ آمدن 57ارب سے بڑھ گئی ہے جبکہ پی ٹی آئی کی حکومت سے پہلے سالانہ آمدن 37ارب روپے تھا، جہانگیر ترین کی طرف سے میڈیا کو جاری ایک بیان میں تسلیم کیا ہے کہ ان کی ملکیت جے ڈی ڈبلیو ہولڈنگ کی سالانہ آمدن 37ارب روپے سے بڑھ کر 57ارب روپے ہوگئی ہے اور اس آمدن میں اضافہ 18.75 فیصددیکھنے میں آیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق مئی 2018 میں ان کی کمپنیوں کی سالانہ آمدن37ارب روپے تھی جبکہ ان کے اثاثوں کی مالیت 48ارب روپے تھی، 2019میں کمپنیوں کی آمدن 57ارب روپے ہے۔ جہانگیر ترین کے ذاتی ملکیتی میں3 عدد شوگر ملیں ہیں جبکہ پاور کمپنیاں بھی ان کی ملکیتی ہیں گزشتہ سال جہانگیر ترین نے 2لاکھ ٹن چینی برآمد کی ہے جبکہدوسرے سال جہانگیر ترین نے 1لاکھ 20ٹن چینی برآمد کرنے کی درخواست عمران خان کو دے رکھی ہے، جہانگیر ترین کی کمپنیوں میں سابق گورنر پنجاب احمد محمود کے شئیرز 26.5 فیصد ہیںجبکہ رانا نسیم کے شئیرز 7.4فیصد ہیں۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
16 8
پیپلز پارٹی کا (ق) لیگ کے حوالے سے بڑا فیصلہ
15 10
پہلا روزہ اور عید کب ہوگی
14 11
2023ء میں پاکستان کا وزیر اعظم کون ہوگا؟ بڑی پیشگوئی
13 12
تنخواہوں میں بڑے اضافے کی تیاریاں
12 11
(ن) لیگ کا بلدیاتی اداروں پر کنٹرول بحال
11 11
بلاول بھٹو کو وزیر اعظم بنوانے کی کوششیں تیز

تازہ ترین ویڈیو
23
امت مسلمہ کے ہیرو صلاح الدین ایوبی کے قول کے پیچھے چھپی سچی کہانی
27 2
یہ وہ جھوٹ ہے جوہر لڑکی ضرور بولتی ہے
2
کرونا وبا کب اور کیسے ختم ہو گی ؟ 1400 سال پہلے حضور اکرم ﷺ کی نشاندہی ، جان کر آپ پھولے نہ سمائیں گے
4 7
جھگڑالو بیوی نعمت خدا وندی مگر کیسے
3 9
کیسے لڑکیوں کو خواب دکھا کر تباہ کیا جاتا ہے ایک سچا واقعہ
52394
الطاف حسین نے آخری وقت میں ہندو مذہب کیوں اختیار کیا،کرونا سے ڈر کر یا ہندووں کی محبت میں

دلچسپ و عجیب
15 7
وہ سربراہ جسے دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
9 1
کرونا وائرس کی وبا کے دوران میاں بیوی ازدواجی تعلقات قائم رکھ سکتے ہیں ؟
20 8
دریا ’’نیل‘‘ کے نیچے زیر زمین کونسا دریا بہتا ہے
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us