1

شوگر ملز نے ملک، کسان اورعوام کو اربوں کا چونا کیسے لگایا؟خبر نےبڑے بڑوں کو نیندیں حرام کر دیں


اسلام آباد (ویب ڈیسک) معاون خصوصی برائے احتساب شہزاد اکبر نے کہا ہے کہ شوگر ملز نے ملک، کسان، عوام کو اربوں کا نقصان پہنچایا،5 برسوں میں29 ارب کی سبسڈی لی، جبکہ صرف 10ارب ٹیکس دیا، کسانوں کو گنے کی کم وزن اورکم قیمت خرید نقصان پہنچایا گیا اور ملز اپنے تمام نقصان کو لاگت میں شامل کرتی رہیں۔انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نے عوام کے ساتھ کیا وعدہ پورا کردیا ہے، رپورٹ پی آئی ڈی کی ویب سائٹ پر ڈالی جائے گی۔

وزیراعظم کہتے رہے کہ کاروبار کرنے والا سیاست میں آکر بھی کاروبار کرے گا۔رپورٹ پی آئی ڈی کی ویب سائٹ پر ڈالی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ شوگر ملز مالکان نے کسان کو تسلسل کے ساتھ نقصان پہنچایا، شوگر ملز کسانوں کو سپورٹ پرائس سے بھی کم دام دیتے ہیں۔کسان سے کٹوتی کے نام زیادتی کی گئی، گنے کے وزن میں ہیراپھیری کی جاتی ہے، اس میں بھی کسانوں کو نقصان اور ملز کو فائدہ ہوتا ہے۔ اسی طرح گنے کی خریداری کے عمل میں کچی پرچی کا استعمال کیا جاتا ہے، جو 140روپے قیمت ہے،کم داموں گنا خرید کرچینی کی لاگت کو زیادہ دکھایا جاتا ہے۔شوگر ملز اپنے نقصان کو بھی پروڈکشن نرخ میں شامل کردیتی ہے۔شہزاد اکبر نے کہا کہ مختلف ملز مالکان کسانوں کے ساتھ غیرسرکاری طور پر بینکنگ

بھی کرتے ہیں، اس مد میں بھی کسانوں سے 35 فیصد وصولی کی جاتی ہے۔اس رپورٹ میں دوسری چیز عوام کے ساتھ زیادتی کی گئی۔ ملز کی چینی کی تیاری کی لاگت ، کہ ایک کلو چینی کتنے پیسے میں بنتی ہے، اس کا پہلے کبھی تخمینہ نہیں لگایا، جبکہ ایک کلو چینی کا تعین حکومتی اداروں اور ریگولیٹری کی ذمہ داری بنتی ہے۔ شوگر ملزنے دو ، دو کھاتے رکھے ہوئے ہیں، ایک کھاتہ سرکار کو دکھانے کیلئے اور دوسرا کھاتہ سیٹھ کو دکھانے کیلئے استعمال کیا جاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ شوگر ملز ماضی میں اور ابھی بھی جو قیمت وصول کررہے ہیں، اس کا ہم پچھلے تین سالوں کا جائزہ لیتے ہیں، جس سے پتا چلتا ہے کہ شوگر ملز ایسوسی ایشن کی چینی کی 2017ء اور 2018ء میں فی کلو قیمت 51روپے ہے، جبکہ فزانزک کمیشن نے قیمت

38روپے ہے۔اس میں 13روپے کمائے گئے۔ اسی طرح 2018ء اور 2019ء میں شوگر ملز ایسوسی ایشن کی چینی کی فی کلو قیمت 52روپے6پیسے اور کمیشن نے 40.6روپے مقرر کی۔جبکہ شوگرملز کی طرف سے 2020ء میں62روپے فی کلو قیمت ہے۔فرانزک کمیشن نے 46روپے مقرر کی ہے۔اس رپورٹ میں لاگت اور چینی کی قیمت میں بڑا واضح فرق ہے۔اسی طرح لاگت بڑھانے کا بھی جائزہ لیا گیا ہے۔ گنا کم قیمت پر خریدا جاتا ہے، اور زیادہ قیمت دکھائی جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ابھی بھی ٹی ٹیز کے ذریعے پیسے کی ٹرانزیکشنز ہورہی ہے، جو غیرقانونی ہے۔چینی کی سیلز میں اکاؤنٹنگ فراڈ بھی سامنے آئے ہیں۔چینی کی سیلز جو چیک کی گئی ہیں، سب بے نامی ٹرانزیکشنز ہوئیں۔



اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
5
راشد خان افغانستان میں موجود گھر والوں کی حفاظت سے متعلق پریشان
19
پی ٹی آئی نے بلوچستان حکومت سے علیحدگی پر غور شروع کر دیا
18
وزیر اعظم ہاؤس بلا کر عمران خان مجھے کیا کہتے رہے؟ بشیر میمن کے تہلکہ خیز انکشافات
17
بجلی سستی کیے جانے کا امکان
16
نواز شریف کے 3 قریبی ساتھی کس اعلیٰ شخصیت سے ملے؟ بڑی خبر
15
عید کے بعد کیا کرنا ہے؟ حکمت عملی تیار

تازہ ترین ویڈیو
23
امت مسلمہ کے ہیرو صلاح الدین ایوبی کے قول کے پیچھے چھپی سچی کہانی
27 2
یہ وہ جھوٹ ہے جوہر لڑکی ضرور بولتی ہے
2
کرونا وبا کب اور کیسے ختم ہو گی ؟ 1400 سال پہلے حضور اکرم ﷺ کی نشاندہی ، جان کر آپ پھولے نہ سمائیں گے
4 7
جھگڑالو بیوی نعمت خدا وندی مگر کیسے
3 9
کیسے لڑکیوں کو خواب دکھا کر تباہ کیا جاتا ہے ایک سچا واقعہ
52394
الطاف حسین نے آخری وقت میں ہندو مذہب کیوں اختیار کیا،کرونا سے ڈر کر یا ہندووں کی محبت میں

دلچسپ و عجیب
11
دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
15 7
وہ سربراہ جسے دفنانے کیلئے کئی بار قبر کھودی گئی مگر اندر ایک کالاسانپ نکلا
9 1
کرونا وائرس کی وبا کے دوران میاں بیوی ازدواجی تعلقات قائم رکھ سکتے ہیں ؟
20 8
دریا ’’نیل‘‘ کے نیچے زیر زمین کونسا دریا بہتا ہے
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us