جب آپ ایک شخص کی ایسی ویڈیو دیکھنا چاہتے ہیں


اسلا آباد(نیوز ڈیسک)پاکستانی ٹک ٹاکرز خود کو کہتے ہیں، یہ مختصر ویڈیو لپ سنک گانوں، فلمی اور ٹی وی شوز کے ڈائیلاگ یا کئی بار اوریجنل مواد کے ساتھ بنائی جاتی ہے۔ یہ ویڈیو بہت مختصر ہوتی ہیں، درحقیقت آپ ایک ٹک ٹاک ویڈیو اتنے وقت میں دیکھ سکتے ہیں، جتنی دیر میں آپ نے یہ جملہ پڑھا ہوگا۔میں کچھ وقت سے ٹک ٹاک سے واقف ہوں، فاصلے سے الجھن کے حوالے سے۔ میں نے اس کے بارے میں صرف بری چیزیں ہی سنی، یہ لت کی طرح، یہ ہماری توجہ کی صلاحیت ختم کرسکتی ہے۔ ٹک ٹاک کے بارے میں میرا خیال تھا، میں آپ اس وقت جاتے ہیں جب آپ ایک شخص کی ایسی ویڈیو دیکھنا چاہتے ہیں جو ٹی شرٹ اور شلوار میں ملبوس ہوتا ہے، 2 مرغے ہاتھ میں ہوتے ہیں، دیہی علاقوں کی خواتین کو مرغیاں دیتے ہوئے عمران خان کے خطاب کی نقل کرتا ہے۔یا اس وقت جب آپ مردوں کے ایسے گروپ کو دیکھنا چاہتے ہیں جو اپنے دوستوں کو بہلا پھسلا کر بستر کی چادر پر لِٹا دیتا ہے اور پھر چاروں کونوں کو پکڑ کر ہوا میں اٹھا کر اسے زمین پر پٹخ کر قہقہے لگاتے ہیں۔ اس کے علاوہ یہ وہ مقام بھی ہے جہاں

آپ ایک لڑکے کو گاڑی کی چھت سے الٹی قلابازی اس وقت لگاتے دیکھتے ہیں جب ایک طیارہ سر کے اوپر سے گزرتا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ وہ اس کو چھو رہا ہے، یا اس وقت جب آپ جاننا چاہتے ہیں کہ پی آئی اے ائیرہوسٹسز کام کے دوران وقت کیسے گزارتی ہیں۔ٹک ٹاک ایسا پلیٹ فارم بھی ہے، جہاں، گزشتہ دنوں ہی ایک صارف حریم شاہ تنازع کا باعث اس وقت بنیں، جب انہوں نے دفتر خارجہ کے کانفرنس روم میں اپنی فلم بنائی، جہاں وہ اس کرسی پر براجمان تھیں جو وزیراعظم کے لیے مختص ہے، جبکہ بولی وڈ گانے چل رہے تھے۔چین سے تعلق رکھنے والی کمپنی بائٹ ڈانس کی پراڈکٹ ٹک ٹاک چین سے باہر 2017 میں متعارف ہوئی اور بہت تیزی سے مقبول ہوئی، جس کے 2019 میں 54 کروڑ سے زائد عالمی صارفین ہیں، جبکہ ماہانہ صارفین کی تعداد کے حوالے سے یہ ٹوئٹر یا اسنیپ چیٹ کو پیچھے چھوڑ چکی ہے۔اس ایپ کی تیزی سے مقبولیت میں اس کے ڈیزائن کا بڑا حصہ ہے، یہ آپ کو گرفت میں لینے کے لیے بنی ہے۔ ٹک ٹاک میں آرٹی فیشل انٹیلی جنس کو یہ جاننے کے لیے استعمال کیا گیا ہے کہ آپ کو کیا پسند ہے اور پھر آپ کے حسب ذائقہ ویڈیوز کی ختم نہ ہونے والی اسکرولنگ شروع ہوجاتی ہے۔میں نے ٹک ٹاک کو اکتوبر میں ڈاؤن لوڈ کیا اور 10 دن میں سیکڑوں 15 سے

60 سیکنڈ کی ویڈیوز دیکھ کر ایپ کی مقبولیت کو سمجھا۔ میں نے ٹاک ٹاک بنانے والوں سے بات کی جن کی ویڈیوز آپ کو پاگل کرتی ہیں اور ہر بار جب میں نے کسی سے انٹرویو کے لیے رابطہ کیا، جہاں میں نے ان کی آوازیں سنیں، میں نے ان کے چہروں کو دیکھتے ہوئے دن گزارے، جو فون کیمرے کو سیلفی موڈ پر خود فلماتے ہوئے ہاتھ بھر کے فاصلے پر تھے، میں ان کے تاثرات سے واقف ہوئی، میں نے انہیں اداس، خوش یا مشتعل دیکھا۔کچھ مواقع پر تو میں بھول گئی کہ میں درحقیقت ان میں سے کسی کو نہیں دیکھ رہی، یہ تو صرف نقل ہے اور اداسی، خوشی یا غصے کے تاثرات 15 سیکنڈ کی ویڈیو کے اختتام پر غائب ہوجاتے ہیں۔بائٹ ڈانس بہت تیزی سے فیس بک کے میدانوں ورچوئل اور حقیقت میں ابھری ہے، سلیکون ویلی میں ایک دفتر کھول چکی ہے اور ترقی کے لیے فیس بک کے ملازمین کی خدمات حاصل کررہی ہے۔یہ ایپ بہت تیزی سے ہماری توجہ کا مرکز بنی اور جوان، عام طور پر نوجوان یا عمر کی تیسری دہائی کے اوائل کے افراد میں زیادہ پسند کی جاتی ہے۔جب آپ ایپ کو اوپن کرتے ہیں، تو اسکرین کے اوپر موجود فون کلاک غائب ہوجاتی ہے اور 2 ٹیب سامنے آتے ہیں، ڈسکور جہاں آپ ٹرینڈنگ ویڈیوز یا ہیش ٹیگز دیکھتے ہیں اور دوسرا ‘فار یو، جہاں ان کیٹیگریز کی ویڈیوز دیکھ سکتے ہیں جو اس ایپ کے خیال میں آپ کو پسند آسکتی ہیں۔میں ٹوئٹر یا ،فیس بک کے ڈسکوری فارمیٹ سے واقف ہوں، جہاں میں وائرل ویڈیوز کو دیکھتی ہوں۔ مگر جب مجھے خود سرچ کرنا پڑا تو میں نے کیا تلاش کیا؟ میں نے عام چیزوں سے آغاز کیا جیسے کتے، پاپ سانگ، سیاسی شخصیات وغیرہ۔ عمران خان کی ایک ویڈیو دیکھتے ہوئے میں نے ہیش ٹیگ جیو نیوز دیکھا، جو اب میری پسندیدہ ٹک ٹاک کیٹیگری ہے، جہاں خبروں کی پیروڈی ہوتی ہیں۔ان میں سے متعدد ویڈیوز ٹوئٹر پر پوسٹ ہوتی ہیں جہاں آپ 15 سیکنڈ کے کلپ میں دیہاتی افراد کو وزیراعظم عمران خان کی جانب سے شہزادہ محمد بن سلمان کو نورخان ائیربیس پر ریسیو کرنے کی نقل کرتے دیکھتے ہیں، جو شہزادے کو بیل گاڑی کی جانب لے جاتے ہیں جبکہ شاہی دورے کے لیے جیو نیوز ہیڈلائن کی دھن پیچھے بج رہی ہوتی ہےمیں جتنا وقت ٹک ٹاک پر گزار رہی ہوں، یہ اتنی ہی زیادہ اپنی جانب کھینچ رہی ہے۔ اس ایپ میں مجھے کسی کی زندگی کی اپ ڈیٹس جاننے کی ضرورت نہیں ہوتی، کسی کی تعطیلات کی تصاویر دیکھ کر حسد کرنے کا موقع نہیں ملتا، مجھے کسی کی سالگرہ یاد رکھنے کی ضرورت نہیں یا ان کے بچے کو کھانا ان کے چہرے پر دیکھنا نہیں پڑتا۔اس ایپ کو پروا نہیں کہ میرا سوشل نیٹ ورک کتنا بڑا ہے، میں کس سے واقف ہوں یا میرے خیال ری ٹوئٹ ہورہے ہیں۔ جس واحد چیز کی اس ایپ کو پروا ہے اور مجھے دینا چاہتی ہے، وہ ہے مجھے اچھا محسوس کرانا، یہ سوشل میڈیا نہیں، یہ تو بہت ذاتی ہے۔اگرچہ ٹک ٹاک دیگر سوشل میڈیا ایپس سے مختلف ہے مگر یہ ان مختلف وجوہات کی بنا پر شہ سرخیوں میں رہتی ہے جن کا سامنا دیگر ٹیکنالوجی کمپنیوں کو بھی ہوتا ہے۔ رواں برس بائٹ ڈانس پر ہانگ کانگ کے مظاہرین کی ویڈیوز ڈیلیٹ کرنے کے الزام کا سامنا ہوا۔مقبول ایپ میوزیکلی کو بائیٹ ڈانس خرید کر 2018 میں ٹک ٹاک کا حصہ بنایا تھا، اور اس کے بارے میں دریافت ہوا کہ وہ غیرقانونی طور پر کم عمر بچوں کے نام، تصاویر اور دیگر ڈیٹا اکٹھا کررہی ہے، ٹک ٹاک پر بھارتی صارفین کے خلاف نفرت انگیز مواد کو نظرانداز کرنے کا الزام بھی لگا جبکہ 4 اراکین پارلیمان نے اس پر پابندی کا مطالبہ کیا۔یہاں تک کہ ٹک ٹاک ویڈیو کے نتیجے میں قتل کی خبریں بھی موجود ہیں، حال ہی میں اگست کے مہینے میں تامل ناڈو میں ایک ویڈیو میں دلت کو کتے اور کم ذات قرار دیا گیا جو وائرل ہوگئی۔ اس کے بعد اس ویڈیو کو بنانے والے ایک صارف نے دیگر کو اس بحث کے بعد قتل کردیا کہ اس ویڈیو کو بنانے کا آئیڈیا کس کا تھا۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
شہری اب اپنے قریبی خدمت مرکز میں اندراج مقدمہ کے لیے درخواست دائرکرسکیں گے
وزیر اعظم نے استعفا نہیں دینا نہ دیں،مولا نافضل الرحمن نے عمران خان کے استعفے کے مطالبے پر یوٹرن لے لیا
اداکار نعمان اعجاز کا2016کاانکم ٹیکس آڈٹ شروع
وزیراعظم نے خواجہ آصف کیخلاف آرٹیکل 6کے تحت مقدمہ تیار کرنےکاحکم دیدیا
سوشل میڈ یا ایپ واٹس ایپ پر پابندی اٹھائی جانے کا امکان
اپوزیشن جماعتوں کی آل پارٹیز کانفرنس میں ارکان کے استعفے پیش

تازہ ترین ویڈیو
کیا انڈر ٹیکر نے اسلام قبول کرلیا ہے ؟؟ حقیقت کیا ہے
دوسرے لوگوں کی طرح کبھی کبھی نماز پڑھ لیتا تھا،عمران خان
رانا ندیم اقبال کی مرد کیساتھ مبینہ جنسی فعل کی تصویریں منظر عام پر ژ لتبئ
لالی وڈ کی اداکارہ اور سکینڈل کوئین میرا زیادہ دیر سکرین سے دور نہیں رہ سکتیں
سینیٹ انتخابات میں پی پی رہنما شیریں رحمان نے سرعام مر دکو گلے لگا لیا ،وہ کون ہے ویڈیو دیکھیں
وادی جن جنس و نسل کی قید سے آزاد ہر فرد کو اپنی طرف متوجہ کئے ہوئے ہے

دلچسپ و عجیب
آج کی سب سے حیران کن خبر 60سالہ شخص کے کان میں مکڑی نے جالا بن دیا
ماضی میں عمران خان اور پاکستان تحریک انصاف کے بارے میں کیا کہتے تھے
اب صرف ماں بہن کی گالی باقی ہے اور مجھے یقین ہے یہ پل بھی کسی دن عبور ہو جائے گا، جاوید چوہدری کا تجزیہ
ملک میں جو کچھ ہوا اور جو کچھ ہو رہا ہے اس پر صرف اور صرف انا للہ و انا الیہ راجعون ہی کہا جا سکتا ہے
اگر آپ مردانہ کمزوری سے پریشان ہیں تو اس کیلئے کسی مہنگی دوا کی ہرگز ضرورت نہیں،یہ نسخہ استعمال کریں
پاکستانی نوجوان نے ہوا سے چلنے والی موٹر سائیکل تیار کر لی، حیرت انگیز خصوصیات،کیسے کام کرتی ہے ؟؟؟
شوہر بیرون ملک ہو توشادی شدہ عورت شوہر کے بغیر کتنی مدت صبر کر سکتی ہے
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us
error: Content is protected !!