ایک ہی دن میں 2 ہزار سے زائد افراد ہلاک


واشنگٹن(نیوز ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے چین اور دیگر ممالک پر الزا م لگانے کے بعد اب عالمی ادارہ صحت (ڈبلیوایچ او)پر چڑھائی کر دی ہے، امریکی صدر نے عالمی ادارہ صحت کو غلط مشورے دینے پر تنقید کا نشانہ بناتے

ہوئے ادارے کی فنڈنگ روکنے کا عندیہ دے دیا ہے۔امریکی میں اس مہلک وائرس کی وجہ سے گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں دو ہزار سے زائد ہلاکتیں ریکارڈ کی گئی ہیں۔ صدر ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس میں پریس بریفنگ کے دوران کہا کہ وہ ڈبلیو ایچ او کے لیے امریکی امداد روک لیں گے،اس کے علاوہ امریکی صدر نے اپنےایک ٹویٹ میں کہا کہ حقیقت میں عالمی ادارہ صحت نے امریکہ کو نقصان پہنچایا ہے امریکہ بھاری رقم کی صورت میں ڈبلیو ایچ او کو امداد دیتا ہے لیکن اس کی تمام تر توجہ چین کی جانب ہے ہم اس معاملے کو درست انداز میں دیکھیں گے۔ دوسری جانب امریکی ماہرین کا کہنا ہے کہ ٹرمپ انتظامیہ نے جلدبازی میں ووہان سے امریکی شہریوں کو نکالنے کا فیصلہ کیا جس سے وائرس پھیلا۔ واضح رہے کہ کورونا وائرس کے باعث امریکا میں ایک ہی دن میں ہلاکتوں کی تعداد سب سے زیادہ2 ہزار سے زائد ریکارڈ کی گئی۔نیو یارک میں کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 4 ہزار سے زائد ہوگئی جو 9ستمبر 2001 کو ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر ہونے والے حملے میں ں ہلاک ہونے والے افراد سے بھی زیادہ ہے۔جان ہاپکنز یونیورسٹی کے اعداد و شمار کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں میں ہونے والی ہلاکتوں سے سے ملک میں اموات کی مجموعی تعداد 13 ہزار کے قریب پہنچ گئی۔امریکا میں 3 لاکھ 98 ہزار سے زیادہ تصدیق شدہ کیسز سامنے آچکے ہیں جو دنیا میں کسی بھی ملک میں سب سے زیادہ ہیں جبکہ عالمی سطح پر کیسز کی تعداد14 لاکھ سے تجاوز کر چکے ہیں۔یہ پیش رفت ایسے وقت میں سامنے آئی جب نیو یارک اور یورپ کے دیگر حصوں میں بحران میں کمی کے آثار سامنے آرہے ہیں اور دوسری جانب

وائرس کے مرکز چین کے شہر ووہان میں 76 روز بعد لاک ڈاؤن ختم کردیا گیا۔ نیو یارک کے گورنر اینڈیو کومو کا کہنا تھا کہ ریاست میں ایک روز میں سب سے ہلاکتیں ریکارڈ کی گئیں جس کی وجہ سے نیوکر کے شہری شدید رنج و غم میں ہیں تاہم انہوں نے حوصلہ افزائی کرتے ہوئے کہا کہ ہسپتالوں میں داخلے اور وینٹی لیٹر پر جانے والے مریضوں کی تعداد کم ہورہی ہے جو اس بات کی نشاندہی کرتا ہے کہ سماجی دوری کے اقدامات کامیاب ہورہے ہیں۔گورنر نے کہا کہ اموات میں یک روز میں اضافے کی وجہ سے خطرناک صورتحال پیدا ہوسکتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ آپ دیکھتے ہیں کہ ہم کیا کر رہے ہیں، اگر ہم وہ نہیں کرتے جو ہم کررہے ہیں تو بہت مختلف صورتحال ہوتی تاہم فی الحال یہ کرسکتے ہیں کہ معاشرتی دوری کام کررہی ہے۔دوسری جانب

برطانوی حکام کا کہنا تھا کہ لندن میں وزیر اعظم بورس جونسن کی حالت خطرے سے باہر ہوتی جارہی ہے اور وہ ہسپتال آکسیجن حاصل کر رہے ہیں اور وینٹی لیٹر پر نہیں۔ان کی غیر موجودگی میں سیکرٹری خارجہ ڈومینک راب کو ملک کے انتظامات سنبھالنے کا کام سونپا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کابینہ میں ہم سب کے لیے وہ صرف ہمارے سربراہ ہی نہیں بالکہ ہمارے ساتھی بھی ہیں اور ہمارے قریبی دوست بھی۔برطانیہ میں ہلاکتوں کی تعداد ایک روز میں تقریباً 800 افراد کی ہلاکت کے بعد 6 ہزار 200 کے قریب پہنچ چکی ہے۔





اس وقت سب سے زیادہ مقبول خبریں


تازہ ترین خبریں
لیموںکےپانی پینے انسانی جسم میں حیران کن تبدیلی
وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی اہلیہ کون ہیں
مرد حضرات خواتین کا سامنا کرنے سے گھبراتے ہیں
ن لیگی رہنما کورونا وائرس کا شکار ہوگئے
بھارت کے سابق کپتان انتقال کرگئے
لداخ میں جھڑپ کے بعد کشیدگی میں اضافہ

تازہ ترین ویڈیو
شوہرکرنل بیوی سے بھی دو قدم آگے
جھگڑالو بیوی نعمت خدا وندی مگر کیسے
کیسے لڑکیوں کو خواب دکھا کر تباہ کیا جاتا ہے ایک سچا واقعہ
اپنے محمدؐ کو مدد کیلئے کیوں نہیں بلاتے
پریش راول نے اسلام قبول کر لیا ؟
کہیں عوام کو سستی دوا نہ مل جائےپاکستانی ڈاکٹر کی تیارکردہ کورونا کی ویکسین کی راہ میں ڈرگ مافیہ آڑے آگیا،سنیں ڈاکٹر کی زبانی

دلچسپ و عجیب
کرونا وائرس کی وبا کے دوران میاں بیوی ازدواجی تعلقات قائم رکھ سکتے ہیں ؟
کورونا وائرس کے ذریعے پوری دنیا میں کرفیو
دریا ’’نیل‘‘ کے نیچے زیر زمین کونسا دریا بہتا ہے
جو ں جوں وقت گزرتا جاتا ہے تو پتہ چلتا ہے کہ جو اللہ اوراس کے رسول نے کہا وہی درست ہے
سیاستدان سیاست میں آنے سے پہلے کیا کیا کرتے تھے
کرونا وائرس ,احتیاطوں کے ساتھ یہ تسبیحات روز کی جائیں، انتہائی مفید معلومات
پنڈتوں نے کورونا وائرس سے بھگوان کو بچانے کے لیے اُن کو ماسک پہنا دیا
ہم سب کے موبائل فون ”میرا جسم تیری مرضی“ سے لبالب
Copyright © 2017 insafnews.pk All Rights Reserved
About Us | Privacy Policy | Discaminer | Contact Us
ArabicEnglishUrdu
error: Content is protected !!